مکتبہ شاملہ کو استعمال کرنے کا طریقہ|| how to use maktaba shamela in urdu

مکتبہ شاملہ کو استعمال کرنے کا طریقہ :

تحریر:

احسان اللہ کیانی

میں مکتبہ شاملہ پچھلے کئی سالوں سے استعمال کر رہا ہوں ،مجھے اس سافٹ وئیر سے بے پناہ فائدہ ہوا ہے ،اسکی وجہ سے میں نے وہ وہ امہات عربی کتب پڑھ لی ہیں ،جن سے براہ راست استفادہ کرنا، میرے لیےتقریبا ناممکن تھا ۔

مثال کےطور پر دیکھیے

اسی مکتبہ شاملہ کی  وجہ سے میں نے مصنف ابن ابی شیبہ ،مصنف عبد الرزاق ، صحاح ستہ ،مسند احمد، صحیح ابن خزیمہ ،صحیح ابن حبان ، معجم صغیر،معجم اوسط اور معجم کبیر جیسی کتب  سے براہ راست  استفادہ کیا  ہے،اسی کی بدولت امام طحاوی کی شرح معانی الآثار کے بعد شرح مشکل الآثار جیسی کتاب   میری نظر سے گزری  ہے ،اسی سافٹ وئیر سے میں  نےجامع الاصول ،جامع المسانید والسنن، مجمع الزوائد ،نصب الرایہ،مقاصد حسنہ ،احادیث مختارہ اور کنز العمال جیسی کتب کا مطالعہ کیا ہے۔

اسی مکتبہ شاملہ نے مجھے تفسیر طبری ،تفسیر ابن ابی حاتم ،تفسیر واحدی ،تفسیر بغوی ،تفسیر زمخشری ،تفسیر رازی ،تفسیر بیضاوی ،تفسیر نسفی ،تفسیر ابن رجب حنبلی،تفسیر ابن عرفہ ،تفسیر جلالین ،تفسیر زاد المسیر ،تفسیر نظم الدر،تفسیر در منثور ،تفسیر روح البیان ،تفسیر فتح القدیر ،تفسیر منار ،تفسیر مراغی ،تفسیر طنطاوی ،اور تفسیر خازن جیسی کتب سے بوقت ضرورت استفادہ کا موقع دیا ۔

اس سافٹ وئیر سے استفادہ کرنا  بھی  کوئی مشکل  کام نہیں ہے  بلکہ انتہائی آسان ہے ،یہ مکتبہ آپ کو بے شمار سہولیات فراہم کرتا ہے

پہلی سہولت:

آپ  دو منٹ میں کسی بھی آیت ،حدیث یا قول کی مکمل تخریج کر سکتے ہیں

مثال کے طور پر یہ حدیث ہے

من أحب دنياه أضر بآخرته

میں اس کی عربی عبارت کو  مکتبہ شاملہ پر سرچ کرکے آپ کو بتاتا ہوں ، یہ حدیث کس کس محدث کی کتاب میں ہے

یہ امام احمد بن حنبل کی مسند ،ابن حبان کی صحیح ،حاکم کی مستدرک ،قضاعی کی مسند شہاب ،بیہقی کی شعب الایمان اور سن کبری میں ہے ،یہ بغوی کی شرح السنۃ ،ابن کثیر کی جامع المسانید ،سخاوی کی مقاصد حسنہ اورعجلونی کی کشف الخفاء  میں بھی ہے ،یہ ہیثمی کی مجمع الزوائد ،مناوی کی کشف المناہج ،سیوطی کی جمع الجوامع  اور ابن الجوزی کی جامع المسانید میں  بھی ہے ۔

یقین مانیے یہ ساری معلومات میں نے فقط دو منٹ میں حاصل کی ہے

یہاں یہ بات بھی دلچسپ ہے کہ میں ہر ہر کتاب کا مکمل حوالہ بھی دے سکتا ہوں،آپ کو سمجھانے کیلئے میں صرف مستدرک کا مکمل حوالہ ذکر کر رہا ہوں

(مستدرک ،امام حاکم ،کتاب الرقاق ،ج۴،ص ۳۴۳،حدیث :۷۸۵۳،مطبوعۃ:دار الکتب العلمیۃ ،بیروت ،لبنان ،سن اشاعت :۱۴۱۱ھجری،۱۹۹۰عیسوی )

ایک اضافی بات بتاؤں  ،یہ حدیث ان الفاظ کے ساتھ  مستدرک میں  صرف دو ہی مقامات پر آئی ہے،جن پر ذہبی کی تعلیق بھی موجود ہے ۔

دوسری سہولت:

آپ پانچ  منٹ میں کتاب کا مختصر تعارف اور مصنف کے حالات زندگی جان سکتے ہیں ۔

تیسری سہولت :

آپ کوئی بھی لفظ لکھ کر اسے کتب حدیث ،کتب تفسیر ،کتب تاریخ یا کسی بھی طرح کی کتب میں تلاش کر سکتے ہیں ۔

چوتھی سہولت :

آپ مشکل الفاظ لکھ کر ان کے معانی دو منٹ میں کتب لغت سے دیکھ سکتے ہیں ۔

پانچویں سہولت :

آپ  پانچ منٹ میں کسی  بھی راوی کے متعلق محدثین کی رائےجان سکتے ہیں ۔

چھٹی سہولت:

آپ بیک وقت پچاس کتب کی  مختلف جلدیں کھول کر سامنے رکھ سکتے ہیں ۔

ساتویں سہولت :

آپ کسی بھی کتاب پر  اپنا حاشیہ لکھ سکتے ہیں

آٹھویں سہولت :

آپ ہر آیت کے متعلق درجنوں تفاسیر  بیک وقت  دیکھ سکتے ہیں، مثال سے سمجھنے کی کوشش کریں ،مثلا

آپ سورت النساء کی آیت نمبر دس کی تفسیر کو زاد المسیر سے دیکھ رہے ہیں ،آپ جو ہی تفسیر  طبری پر کلک کریں گے ،یہ مکتبہ اس تفسیر کی سورت النساءکی  آیت نمبر دس کی تفسیر نکال کر آپ کے سامنے پیش کر دے گا ،یہ سارا   کام زیادہ سے زیادہ پچاس سیکنڈ میں ہوگا ۔

نویں سہولت :

آپ کسی بھی کتاب کو ایک منٹ میں ورڈ کی فائل میں تبدیل کر سکتے ہیں

یہ  سب کچھ کیسے ہوتا ہے ،میں نے اس پر ایک تفصیلی وڈیو بنائی ہے ،جو پچاس منٹ لمبی ہے ،لیکن میں دعوی سے کہتا ہوں ،یہ وڈیو آپ کیلئے علم دین کی رائیں آسان کر دے گی

وڈیو کا لنک یہ ہے  

آخر میں میری آپ سے گزارش ہے کہ آپ اسے دوسرے دینی طلباء اور علماء تک بھی پہنچا دیں تاکہ وہ علم دین کے بنیادی مصاد ر تک با آسانی پہنچ سکیں ،وہ جب جب بھی اس مکتبہ سے فائدہ اٹھائیں گے ،اس سے آپ کو اور مجھے بھی ثواب ملے گا ۔

جس بھائی یا بہن کو میری وڈیو سے فائدہ ہو،وہ میری اور میرے والدین کی بخشش کیلئے دعا کریں ۔


کوئی تبصرے نہیں

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.